Sarim Noor Preside MYL District East Meeting

MYL District East Ke President Shahnoor Shaikh or G.S Raja Nasir ke Sath Meeting.

District Ke Tamam PSs me Visit Schedule or “Tajdeed e Ehd e Wafa Workers Convention Dist. East” Ki Date Final.

1st Visit at PS – 104 & PS-105
Day: Thursday 13 Dec 2018
Time: 05:00 P.M
Place: Mehmood abad

2nd Visit at PS- 101
Day : Friday, 14 Dec 18.
Time: 8:00 ( After Nimaz e Isha)
Place: Umair House ( President PS-101)

3rd visit at PS- 106
Day: Saturday, 15 Dec 18
Time: 7:00 P.M
Place: Shahnoor Shaikh House ( President Dist. East)

&
“Tajdeed e Ehd e Wafa Workers Convention Dist. East”
(Quaid Day Preparation)
16-December 2018 Sunday 2PM at Al-Minhaj Secteriate

Advertisements

Corrupt Hukmaran Bechaari Awam

جب تک پاکستان میں کرپشن رہے گی بھٹو زندہ رہے گا۔ جب تک جاہل غریب بھوکا رہے گا بھٹو زندہ رہےگا۔ جب تک PPP کے وڈیرے جاہل غریب کا شکار کرتے رہیں گے بھٹو زندہ رہے گا۔ جس دن عوام میں جہالت ختم ہو جائیگی، عوام خود پر بھروسہ کرنا سیکھ جائیں گے بھٹو مر جائے گا۔ جو مستقبل قریب میں تو نظر نہیں آتی۔ اسلامی سوشلزم کیا ہے، بھٹو نے کبھی نہیں بتایا۔ ہم نے اور NSF کے لڑکوں نے 1970 کے الیکشن میں اسلامی مساوات اور شوشلزم کے تعلق کو اجاگر کیا۔ جمیعت کو لا جواب کیا۔ قریہ قریہ جا کر بھٹو کو کامیاب کیا۔ 1970 کے الیکشن کے بعد جب پتہ چلا کہ بھٹو تو کسی سیاسی نظرئے کو مانتا ہی نہیں ہے صرف اقتدار کی حوس ہے۔ جب الیکشن کے بعد PPP ایک مضبوط اپوزیشن پارٹی بن کر ابھری۔ تب ہم نے بھٹو صاحب سے 70 کلفٹن جا کر درخواست کی کہ PPP اپوزیشن میں بیٹھ جائے آپ عوامی انداز میں بہت اچھی تنقید کرتے ہیں، مجیب اپنے وعدوں کو پورا نہیں کر سکے گا اور اگلے الیکشن میں PPP مشرقی پاکستان سے بھی جیتے گی۔ بھٹو نے ہماری کوئی ںات نہ سنی اور تم اسٹوڈینٹ بچے ہو سیاست نہیں جآنتے۔ پھر ھم نے اور نظریاتی لوگوں نے PPP چھوڑ دی اور PPP میں موقعہ پرست اور کرپٹ لوگ شامل ہوتے گئے۔ جمہوریت کے قتل سے مشرقی پاکستان الگ ہو گیا۔ اب ہمارے ہی روٹی کپڑا اور مکان کے نعروں سے غریب کو مسلسل لوٹا جاتا ہے غریب کو غریب تر اور جاہل رکھنے کے پورے حربے استعمال کئیے جاتے ہیں اور ہر بار غریب سے لوٹی دولت سے غریب کو بے وقوف بنایا جاتا ہے اور اس کھیل میں ساری سیاسی جماعتیں شامل ہو گئی ہیں۔ اگر PPP اپنے دور میں تین ارب روپے بغیر خزانے کے چھاپتی ہے تو PMLN بھی اس کام کو جاری رکھتی ہے۔ انگریز کی پالیسی لڑاؤ اور حکومت کرو ، پر ہر پارٹی عمل کر رہی ہے اور اس معاملے میں PPP، PMLN،MQM،، ANP، اور ملا پارٹیاں سب ایک ہیں۔ شاید میں کچھ زیادہ سچ لکھ گیا بہت سوں کو ہضم نہ ہو پائے گا۔
ایم ایم بشیر ثانی۔

Ao Tumhe Bataon Mera Tahir Kon Hai

وہ کہہ رہا تھا
میرا طاہر
شہنشاہِ خطابت ہے
لہجے میں زرا دیکھو
اجب سی اک بلاغت ہے
جو اس کا روپ دیکھو تو
ایماں کی حلاوت ہے
جو اس سے بات کرلو تو
دنیا سے بغاوت ہے

وہ مجھ سے کہہ رہا تھاکہ!
ارے تم تو بِکے وے ہو
تمہیں کیامیں سمجھاوں
ُاب کس کام کے تم ہو؟

کہا میں نے بھی پِھر اس سے
کہ سُن
میرا طاہر مجدد ہے
قلندر ہے
خطابت ان کے در کی
اک ادنا سی کرامت ہے
نبیِ پاک کاصدقہ
اِس وقت کی امامت ہے
وہ ایسا بادشاہ ہے جو
درِ زہرا کا نوکر ہے
علی پے جان دیتا ہے
معارف کا سمندر ہے
لرزاں ہیں حاکم بھی
جرات ہے شجاعت ہے
وہ جب بھی بات کرتا ہے
لگے رحمت کا پیکر ہے
اللہ سے میلاتا ہے
دمادم مست قلندر ہے

زمانے یاد رکھیں گے
زمانہ وہ تو آئے گا
ابھی دیکھو جہاں بھی تم
زمانہ اُس کا خوگر ہے

تیرے الفاظ کو چوموں
کہا تو نے بِکائو ہوں

بہت مقبول ہو عاجز
جو وہ کہہ دیں سگِ در ہے

What is Rule of State Bank Pakistan

کیا آپ جانتے ہیں

کہ حکومت پاکستان کو اپنی مرضی سے کرنسی جاری کرنے کا کوئی اختیار نہیں.؟

آپ کی جیب میں پڑا ہر کرنسی نوٹ ایک قرض ہے جو آپ کی حکومت نے سٹیٹ بنک سے اس وعدے پر لیا ہے کہ وہ اس نوٹ کو سود سمیت واپس کرے گی.

چونکہ کرنسی جاری کرنے کا اختیار ہی صرف سٹیٹ بنک کے پاس ہے اس لیئے کرنسی نوٹ کی واپسی پر سٹیٹ بنک کے حصے کے سود کا پیسا بھی سٹیٹ بنک ہی چھاپتا ہے اور اس پر دوبارہ سود لیا جاتا ہے. وہ سود واپس کرنے کے لیئے دوبارہ نوٹ چھاپے جاتے ہیں اور دوبارہ ان پر سود لیا جاتا ہے. یہ سلسلہ کبھی ختم نہیں ہوتا.

اسی وجہ سے ملک کا اندرونی قرضہ کبھی بھی کم یا ختم نہیں ہوا اور مہنگائی مسلسل بڑھتی رہتی ہے.

سٹیٹ بنک آف پاکستان حکومتِ پاکستان کے ماتحت نہیں بلکہ ایک آزاد ادارہ ہے.

ہر کرنسی نوٹ اس بات کی رسید ہوتا ہے کہ سٹیٹ بنک کے پاس اس نوٹ کے متبادل سونا موجود ہے. جبکہ اصل میں کرنسی نوٹ کے مقابلے میں سٹیٹ بنک کے پاس موجود سونے کی شرح بیس فیصد سے بھی کم ہے.

آپ کی جیب میں موجود کرنسی نوٹ پر لکھی تحریر “حامل ہزا کو مطالبے پر ادا کرے گا” کا مطلب یہ ہے کہ آپ کی حکومت آپ کے مطالبے پر اس نوٹ کے برابر سونا ادا کرنے کی پابند ہے.

اگر آج ہی پاکستان کی کل آبادی سٹیٹ بنک کو نوٹ واپس کر کے سونا لینا شروع کر دے تو صرف بیس فیصد نوٹ قابلِ استعمال ہونگے. باقی اسی فیصد نوٹوں کی قیمت تیرہ روپے فی کلو ہے. کیوں کہ باقی نوٹوں کا سونا موجود ہی نہیں اس لیئے ان کی قیمت وہی ہے جو ردی کوڑے کی ہوتی ہے.

دوسری جنگِ عظیم کے بعد یورپ کے لوگ لکڑی کی جگہ کرنسی نوٹ جلاتے تھے. کیوں کہ لکڑی کی قیمت کرنسی سے زیادہ ہو گئی تھی.

مہنگائی بڑھنے کی شرح جسے انفلیشن یا افراط زر کہتے ہیں کا کانسیپٹ صرف سو سال پرانا ہے.

ایک مرغی کی قیمت فرعون کے دور میں دو درہم تھی جو کی انیسویں صدی کہ آخر تک دو درہم ہی رہی. اگر ہم غور کریں تو آج بھی اس کی قیمت دو درہم ہی بنتی ہے. مطلب صفر فیصد انفلیشن.

پچھلے صرف 100 سالوں کے دوران کاغزی کرنسی کی قیمت کئی سو گنا گر چکی ہے.

انفلیشن دراصل ایک ٹیکس ہے جو امیر اور غریب بغیر کسی تفریق کے برابر ادا کرتے ہیں.

آج غربت اور افلاس کی سب سے بڑی وجہ ہی پیپر کرنسی اور اس پر دیا جانے والا سود ہے.

جب ہم آئی ایم ایف سے قرضہ لیتے ہیں تو اصل میں ڈالرز ہمارے پاس منتقل نہیں ہوتے. بلکہ امریکہ میں ہی کسی بینک میں موجود ایک اکاؤنٹ میں صرف کمپیوٹر کے زریعے ٹرانزیکشن ہوتی ہے. اس اکاؤنٹ میں بھی ڈالرز منتقل نہیں ہوتے.

آج تک دنیا میں موجود ڈالرز کا صرف تین فیصد چھاپا گیا ہے. باقی ستانوے فیصد ڈالرز صرف کمپیوٹرز کی ہارڈ ڈسکس میں محفوظ ہیں.

آئی ایم ایف کے چارٹر میں یہ بات تحریر ہے کہ کوئی ملک سونے اور چاندی کے سکے جاری نہیں کر سکتا. اگر کرے گا تو آئی ایم ایف یا ورلڈ بینک ایسے ملک کو قرضہ نہیں دیں گے.

امریکہ سمیت دنیا میں کئی سربراہ مملکت اس بات پر قتل ہو چکے ہیں کیوں کہ انہوں نے اپنی کرنسی یا سونے اور چاندی کے سکے جاری کرنے کی کوشش کی.

اس ملک کی حکومت وزیرِ خزانہ اور سیکریٹری فائیننس آئی ایم ایف کی اجازت کے بغیر نہیں لگا سکتی.

آئی ایم ایف قرضہ دیتے ہوئے سب سے پہلی شرط پرائیویٹائیزیشن کی رکھتا ہے اور اس کے بعد قرض دیا جاتا ہے. کبھی غور کیجئیے گا کہ ایسا کیوں ہے.

سعودی عرب اور ایران سمیت تمام پٹرول برآمد کرنے والے ملک اس بات کے پابند ہیں کہ پٹرول صرف ڈالرز کے بدلے بیچا جائے گا نہ کہ بیچنے یا خریدنے والے ملک کی کرنسی میں.

انسانی تاریخ میں کبھی بھی اتنی بڑی تعداد میں لوگوں کو بیوقوف نہیں بنایا جا سکا. یہ انسان کی تاریخ کا سب سے بڑا فراڈ …

What we do wrong?

ﮨﻢ ﻧﮯ ﺩﻭ ﻧﻮ ﻋﻤﺮ ﺑﭽﻮﮞ ﮐﻮ ﻟﯿﺎ۔ ﺍﯾﮏ ﮐﻮ ﭘﺮﺍﻧﮯ ﮐﭙﮍﮮ ﭘﮩﻨﺎ ﮐﺮ ﺑﮭﯿﮏ ﻣﺎﻧﮕﻨﮯ ﺑﮭﯿﺠﺎ ﺍﻭﺭ ﺩﻭﺳﺮﮮ ﮐﻮ ﻣﺨﺘﻠﻒ ﭼﯿﺰﯾﮟ ﺩﮮ ﮐﺮ ﻓﺮﻭﺧﺖ ﮐﺮﻧﮯ ﺑﮭﯿﺠﺎ۔ ﺷﺎﻡ ﮐﻮ ﺑﮭﮑﺎﺭﯼ ﺑﭽﮧ ﺁﭨﮫ ﺳﻮ روپے ﺍﻭﺭ ﻣﺰﺩﻭﺭ ﺑﭽﮧ چار ﺳﻮ ﺭﻭﭘﮯ ﮐﻤﺎ ﮐﺮ ﻻﯾﺎ۔ ﺍﺱ ﺳﻤﺎﺟﯽ ﺗﺠﺮﺑﮯ ﮐﺎ ﻧﺘﯿﺠﮧ ﻭﺍﺿﺢ ﮨﮯ۔ ﺩﺭﺍﺻﻞ ﺑﺤﯿﺜﯿﺖ ﻗﻮﻡ ﮨﻢ ﺑﮭﯿﮏ ﮐﯽ ﺣﻮﺻﻠﮧ ﺍﻓﺰﺍﺋﯽ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﻣﺤﻨﺖ ﻣﺰﺩﻭﺭﯼ ﮐﯽ ﺣﻮﺻﻠﮧ ﺷﮑﻨﯽ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ۔ ﮨﻮﭨﻞ ﮐﮯ ﻭﯾﭩﺮ ، ﺳﺒﺰﯼ ﻓﺮﻭﺵ ﺍﻭﺭ ﭼﮭﻮﭨﯽ ﺳﻄﺢ ﮐﮯ ﻣﺤﻨﺖ ﮐﺸﻮﮞ ﮐﮯ ﺳﺎﺗﮫ ﺍﯾﮏ ﺍﯾﮏ ﭘﺎﺋﯽ ﮐﺎ ﺣﺴﺎﺏ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﺑﮭﮑﺎﺭﯾﻮﮞ ﮐﻮ ﺩﺱ ﺑﯿﺲ ﺑﻠﮑﮧ ﺳﻮ ﭘﭽﺎﺱ ﺭﻭﭘﮯ ﺩﮮ ﮐﺮ ﺳﻤﺠﮭﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﮐﮧ ﺟﻨﺖ ﻭﺍﺟﺐ ﮨﻮ ﮔﺌﯽ۔
ﮨﻮﻧﺎ ﺗﻮ ﯾﮧ ﭼﺎﮨﺌﮯ ﮐﮧ ﻣﺎﻧﮕﻨﮯ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﻮ ﺻﺮﻑ ﮐﮭﺎﻧﺎ ﮐﮭﻼﺋﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﻣﺰﺩﻭﺭﯼ ﮐﺮﻧﮯ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﻮ ﺍﻥ ﮐﮯ ﺣﻖ ﺳﮯ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﺩﯾﮟ۔ﮨﻤﺎﺭﮮ ﺍﺳﺘﺎﺩ ﻓﺮﻣﺎﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﮐﮧ ﺑﮭﮑﺎﺭﯼ ﮐﻮ ﺍﮔﺮ ﺁﭖ ﺍﯾﮏ ﻻﮐﮫ ﺭﻭﭘﮯ ﻧﻘﺪ ﺩﮮ ﺩﯾﮟ ﺗﻮ ﻭﮦ ﺍﺱ ﮐﻮ ﻣﺤﻔﻮﻅ ﻣﻘﺎﻡ ﭘﺮ ﭘﮩﻨﭽﺎ ﮐﺮ ﺍﮔﻠﮯ ﺩﻥ ﭘﮭﺮ ﺳﮯ ﺑﮭﯿﮏ ﻣﺎﻧﮕﻨﺎ ﺷﺮﻭﻉ ﮐﺮ ﺩﯾﺘﺎ ﮨﮯ۔ﺍﺱ ﮐﮯ ﺑﺮﻋﮑﺲ ﺍﮔﺮ ﺁﭖ ﮐﺴﯽ ﻣﺰﺩﻭﺭ ﯾﺎ ﺳﻔﯿﺪ ﭘﻮﺵ ﺁﺩﻣﯽ ﮐﯽ ﻣﺪﺩ ﮐﺮﯾﮟ ﺗﻮ ﺍﭘﻨﯽ ﺟﺎﺋﺰ ﺿﺮﻭﺭﺕ ﭘﻮﺭﯼ ﮐﺮﮐﮯ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﺑﮩﺘﺮ ﺍﻧﺪﺍﺯ ﺳﮯ ﺍﭘﻨﯽ ﻣﺰﺩﻭﺭﯼ ﮐﺮﮮ ﮔﺎ۔ ﮐﯿﻮﮞ ﻧﺎﮞ ، ﮔﮭﺮ ﻣﯿﮟ ﺍﯾﮏ ﻣﺮﺗﺒﺎﻥ ﺭﮐﮭﯿﮟ ﺑﮭﯿﮏ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﻣﺨﺘﺺ ﺳﮑﮯ ﺍﺱ ﻣﯿﮟ ﮈﺍﻟﺘﮯ ﺭﮨﯿﮟ ﻣﻨﺎﺳﺐ ﺭﻗﻢ ﺟﻤﻊ ﮨﻮ ﺟﺎﺋﮯ ﺗﻮ ﺍﺱ ﮐﮯ ﻧﻮﭦ ﺑﻨﺎ ﮐﺮ ﺍﯾﺴﮯ ﺁﺩﻣﯽ ﮐﻮ ﺩﯾﮟ ﺟﻮ ﺑﮭﮑﺎﺭﯼ ﻧﮩﯿﮟ ﺍﺱ ﻣﻠﮏ ﻣﯿﮟ ﻻﮐﮭﻮﮞ ﻃﺎﻟﺐ ﻋﻠﻢ ، ﻣﺮﯾﺾ ، ﻣﺰﺩﻭﺭ ﺍﻭﺭ ﺧﻮﺍﺗﯿﻦ ﺍﯾﮏ ﺍﯾﮏ ﭨﮑﮯ ﮐﮯ ﻣﺤﺘﺎﺝ ﮨﯿﮟ ﺻﺤﯿﺢ ﻣﺴﺘﺤﻖ ﮐﯽ ﻣﺪﺩ ﮐﺮﯾﮟ ﺗﻮ ﺍﯾﮏ ﺭﻭﭘﯿﮧ ﺑﮭﯽ ﺁﭖ ﮐﻮ ﭘﻞ ﺻﺮﺍﻁ ﭘﺎﺭ ﮐﺮﻧﮯ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﮐﺎﻓﯽ ﮨﻮ ﺳﮑﺘﺎ ﮨﮯ ﯾﺎﺩ ﺭﮐﮭﺌﮯ ﺑﮭﯿﮏ ﺩﯾﻨﮯ ﺳﮯ ﮔﺪﺍﮔﺮﯼ ﺧﺘﻢ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮ ﺳﮑﺘﯽ ﺑﻠﮑﮧ ﺑﮍﮬﺘﯽ ﮨﮯ ، ﺧﯿﺮﺍﺕ ﺩﯾﮟ ﻣﻨﺼﻮﺑﮧ ﺑﻨﺪﯼ ﺍﻭﺭ ﺍﺣﺘﯿﺎﻁ ﮐﮯ ﺳﺎﺗﮫ ، ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﺩﻧﯿﺎ ﺑﮭﯽ ﺑﺪﻝ ﺳﮑﺘﯽ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺁﺧﺮﺕ ﺑﮭﯽ.

Kia Barkat Name ki Koi Cheez Hoti hai?

ايک شخص ابراہیم بن ادہم رحمہ اللہ سے بحث کررہا تھاکہ برکت نام کی کوئی چیز نہیں ہوتی ۔
ابراہیم بن ادہم نے کہا کہ تم نے کتے اور بکریاں دیکھیں ہیں وہ شخص بولا ہاں ۔ابراہیم بن ادہم بولے سب سے زیادہ بچے کون جنتاہے کتے یابکری وہ بولا کہ کتے ۔ابراہیم بن ادہم بولے تم کو* بکریاں زیادہ نظر آتیں ہیں یاکتے وہ بولا بکریاں ۔ابراہیم بن ادہم بولے جبکہ بکریاں ذبح ہوتیں ہیں مگر پھر بھی کم نہیں ہوتیں توکیا برکت نہیں ہے اسی کانام برکت ہے ۔پھر وہ شخص بولا کہ ایسا کیوں ہے کہ بکریوں میں برکت ہے اور کتے میں نہیں ۔ابراہیم بن ادہم بولے کہ بکریاں رات ہوتے ہی فورا سوجاتیں ہیں اور فجر سے پہلے اٹھ جاتیں ہیں اور یہ نزول رحمت کا وقت ہوتا ہے لہذا ان میں برکت حاصل ہوتی ہےاور کتے رات بھر بھونکتے ہیں اور فجر کے قریب سو:جاتے ہیں لہذا رحمت وبرکت سے محروم ہوتے ہیں۔پس غوروفکر کامقام ہےآج ہمارا بھی یہی حال ہے ہم اپنی راتوں کو فضولیات میں گزارتے ہیں اور وقت نزول رحمت ہم سوجاتے ہیں اسی وجہ سے آج نہ ہی ہمارے مال میں اور نہ ہی ہماری اولاد میں اورنہ ہی کسی اور چیز میں برکت حاصل ہوتی ہے۔

General Knowledge – Questions Answers

📚* جنرل نالج
بہترین سوالات و جوابات

سوال : وہ جھیل کس ملک میں ہے جس کی سطح کا پانی شربت کی طرح میٹھاہے مگر سطح کے تین فٹ نیچے کا پانی کڑواہے؟
جواب: جرمنی میں۔
سوال: وہ کون سا پرندہ ہے جو اپنے بچوں کو دودھ پلاتا ہے ؟
جواب: چمگاڈر۔
سوال: وہ کون سا ملک ہے جہاں چڑیا نہیں پائی جاتی ہے؟
جواب: چین۔
سوال: وہ کونسا جانور ہے جس سے شیر بھی ڈرتا ہے ؟
جواب: سیمیہ (شکونڑ)۔
سوال: وہ کونسے جانور ہے جو مختلف رنگوں میں فرق نہیں کر سکتے ؟
جواب: گدھ اور بندر۔
سوال: اس مکڑی کا نام بتائیں جو ۳۰ سال تک زندہ رہ سکتی ہے؟
جواب: ٹرنٹولا نامی مکڑی۔
سوال: انسان کے بعد دنیا کی ذہین ترین مخلوق کونسی ہے ؟
جواب: مکڑی ، ڈولفن اور چمنیزی بندر۔
سوال: بندر کے کتنے دماغ ہوتے ہیں ؟
جواب: دو۔
سوال: وہ کونسا ملک ہے جہاں کوئی دریا نہیں ہے ؟
جواب: کویت۔
سوال: چین کی سرحدیں کتنے ملکوں سے ملتی ہیں ؟
جواب: ۱۳ ملکوں سے۔
سوال: کے ٹو کا دوسرا نام کیا ہے ؟
Mount Godwin Austen :جواب
سوال: پرندوں کا درجہ حرارت کتنا ہوتا ہے؟
جواب: ۱۱۲ درجہ فارن ہائیٹ۔
سوال: اس روشنی کا نام بتائیں جو ایک شہد کی مکھی تو دیکھ سکتی ہے مگر انسان نہیں ؟
جواب: الٹراوائلٹ۔
سوال: اس پرندے کا نام بتائیں جو الٹا پیچھے کی طرف بھی اڑ سکتا ہے؟
جواب: ہمنگ برڈ۔
سوال: شیر کے بچوں کو انگریزی میں کیا کہتے ہیں ؟
Cub :جواب
سوال : مور کی مرغوب غذاکیا ہے؟
جواب: سانپ۔
سوال: ان پرندوں کے نام بتائیں جنہیں دنیا میں امن کا نشان کہا جاتا ہے؟
جواب: فاختہ اور کبوتر۔
سوال: دنیا میں حشرات کی کتنی اقسام ہیں ؟
جواب: سات لاکھ۔
سوال: دنیا میں سب سے چھوٹے پرندے کا نام بتائیں ؟
جواب: ہمنگ برڈ۔
سوال: اس بندر کا نام بتائیں جس کی جسامت ایک گلہری کے برابر ہے؟
Marmoset :جواب
سوال: دنیا کے سب سے قدیم کیڑے کا نام کیا ہے؟
جواب: لال بیگ۔
سوال: پالتو جانور میں سب سے ذہین جانور کونسا ہے؟
جواب: کتا اور گھوڑا۔
سوال: اس کیڑے کا نام بتائیں جس کے دانت اس کے پیٹ کے اندر ہوتے ہیں ؟
جواب: کیکڑا۔
سوال: شہد کی مکھی کی کتنی آنکھیں ہوتی ہیں ؟
جواب: آٹھ۔
سوال: کونسا پرندہ ہوا میں کھڑاہوسکتا ہے؟
جواب: شکرا۔
سوال: اس جانور کا نام بتائیں جس کی تین آنکھیں ہیں ؟
جواب: کنگ کر یب۔
سوال: دنیا کا پہلا عجوبہ کیا ہے؟
جواب: اہرام مصر ۔
سوال: وہ کونسا پرندہ ہے جو اڑ سکتا ہے مگر چل نہیں سکتا ؟
جواب: ہمنگ برڈ۔
سوال: اس پرندے کا نام بتائیے جو حصرات سلیمان علیہ ا سلام کے زمانے میں آسمان کی بلندی پر اڑتے ہوئے زمین میں پانی کی گہرائی ، میٹھے یا کڑوے ہونے کا بتاتاتھا ؟
جواب: ہْد ہْد۔
سوال: وہ کونسا ملک ہے جو سال میں دو مرتبہ آزادی کی سالگیرہ مناتا ہے؟
جواب: پانامہ پہلی مرتبہ ۳ نومبر اور دوسری بار ۲۸نومبر کو۔
سوال: وہ کونسا ملک ہے جہاں پولیس نہیں ہوتی ؟
جواب: عوامی جمہوریہ چین۔
سوال: وہ کون سا ملک ہے جہاں چاول کی فصل ہونے پر شادی اور کٹائی پر طلاق دی جاتی ہے؟
جواب: انڈونیشیا کے بہت سارے جزیروں میں فصلی شادیاں ہوتی ہیں۔
سوال: دنیا میں وہ کونسا شہر ہے جو زیر زمین آباد ہے؟
جواب: تیونس کا شہر مطماطہ۔
سوال: وہ کونسا قبیلہ ہے جہاں دولہے کو ایک وقت میں دو عورتوں سے شادی کرنا ضروری ہے؟
جواب: جنوبی افریقہ میں میر رومانی ایک قبیلہ ہے جہاں دولہے کو دولہن اور اس کی بہن سے ایک وقت میں شادی کرنا ضروری ہے۔
سوال: وہ کونسا دریا ہے جس میں ایک بھی مچھلی نہیں ہے؟
جواب: اس دریا کا نام رائیووفاگری ہے یہ کولمبیا میں ہے۔
سوال: وہ کونسا بادشاہ تھا جس نے اپنے کتے کو ایک ریاست کا وزیر اعلی مقرر کردیا تھا؟
جواب: ناروے کے بادشاہ السپسن نے۔
سوال: سب سے تیز دوڑنے والے جانور کا نام بتائیں؟
جواب: چیتا ۷۰ میل فی گھنٹہ۔
سوال: دنیا کے سب سے بڑے اژدھے کہاں پائے جاتے ہیں؟
جواب: ملائیشیا میں۔